My Authors
Read all threads
1/ مسلمان مسلمان کا بھائی ہے (متفق علیہ) ہر مسلمان دوسرے مسلمان کے لیے ایسا ہی رویہ رکھتا ہے جیسے اپنی نسبی اور حقیقی بھائی سے، کیونکہ حقیقی بھائی میں جیسے ایک ماں باپ ہونے کی وجہ سے تعلق ہے اسی طرح ہر مسلمان چونکہ ایک خدا کا ماننے والا ہے اس لیے وہ سب ایک دوسرے کے بھائی ہیں،
2/ اور جسمانی رشتوں میں تو کمزوری ہوتی بھی ہے، یا کبھی جذباتی کوتاہیوں سے اس میں فرق آجاتا ہے مگر ایمانی اور اسلامی اخوت کا رشتہ، چونکہ خدا تعالیٰ کے واسطے سے جڑا ہوا ہے اس لیے اس میں کوئی توڑ او رکمزوری نہیں آتی۔ البتہ اس کے لیے یہ ضروری ہے کہ مسلمان صحیح معنی میں مسلمان
3/ ہوں، ورنہ اگر اللہ تعالیٰ ہی سے ان کا تعلق مضبوط اور درست نہیں تو اس کی بدولت قائم رہنے والے رشتے اور تعلقات بھی کمزور ہوں گے۔ چنانچہ ہم میں سے ہر مسلمان کو یہ دیکھ لینا چاہیے کہ وہ کسی دوسرے مسلمان سے بحیثیت اس کے مسلمان ہونے کے کس قدر اخوت کا مظاہرہ کرتا ہے۔

(فَبِمَا
4/ رَحمٍَ مِنَ اللّٰہِ لِنتَ لَھ±م وَلَو ک±نتَ فَظًّا غَلِیظَ القَلبِ لَانفَضّ±وا مِن حَولِکَ) آل عمران:۹۵۱

”اللہ کی مہربانی سے آپ ان کیلئے نرم واقع ہوئے ہیں، اگر آپ درشت مزاج، اور سخت دل ہوتے تو یہ لوگ آپ کے پاس سے بھاگ جاتے“۔

٭ایک حدیث میں مزید فرمایا کہ مسلمان مسلمان کا
5/ بھائی ہے وہ آڑے وقت میں اس کے کام آتا ہے اس کی طرف سے ضرورت کے وقت دفاع کرتا ہے اور اس کی تکلیف سے بچاتا ہے۔

٭ نبی نے ارشاد فرمایا اللہ تعالیٰ نے مخلوق کو پیدا کیا، جب وہ ان کی تخلیق سے فارغ ہو گیا تو ”رحم“ کھڑا ہو گیا اور کہنے لگا کہ رشتہ توڑنے سے پناہ مانگنے کا یہی مقام
6/ ہے، اللہ تعالیٰ نے فرمایا ہاں! کیا تو اس بات پر راضی نہیں ہے کہ جو تجھے جوڑے میں اسے جوڑوں اور جو تجھے توڑے میں اسے توڑوں؟ اس نے کہا کیوں نہیں؟ تو اللہ تعالیٰ نے فرمایا پھر یہ تیرا حق ٹھہرا، پھر نبی نے فرمایا اگر تم چاہو تو اس آیت کی تلاوت کر لو ”کہ اگر تم منہ پھیر لو زمین
7/ میں فساد پھیلاو¿ اور قطع رحمی کرو، یہی وہ لوگ ہیں جن پر اللہ نے لعنت کی اور انہیں گونگا اور ان کی آنکھوں کو اندھا کر دیا، کیا یہ لوگ قرآنِ کریم میں تدبر نہیں کرتے یا ان کے دلوں پر تالے پڑے ہیں۔

٭ نبی نے فرمایا بیواو¿ں اور مسکینوں کی خبر گیری کرنے والا اس شخص کی طرح ہے جو
8/ راہِ خدا میں جہاد کیلئے نکلا ہوا ہو، جو ساری رات قیام کرتا ہو اور اس میں کبھی کوتاہی نہ کرتا ہو اور جو ہمیشہ روزہ رکھتا ہو اور کبھی ناغہ نہ کرتا ہو۔

٭ نبی نے ارشاد فرمایا قیامت کے دن اللہ تعالیٰ فرمائے گا کہاں ہیں وہ لوگ جو میری عظمت و جلال کی وجہ سے ایک دوسرے سے محبت
9/ کرتے تھے، آج میں انہیں عرش کے سائے میں جگہ عطا کروں گا جبکہ میرے عرش کے سائے کے علاوہ کہیں سایہ نہیں ہے۔

٭ نبی نے فرمایا ایک آدمی اپنے ایک دینی بھائی سے جو دوسرے شہر میں رہتا تھا ملاقات کیلئے روانہ ہوا، اللہ تعالیٰ نے اس کے راستے میں ایک فرشتے کو چھپا دیا، چلتے چلتے جب وہ
10/ آدمی اس فرشتے کے قریب پہنچا تو فرشتے نے اس سے پوچھا کہ تمہارا کہاں کا ارادہ ہے؟ اس نے جواب دیا کہ میں اپنے ایک بھائی سے ملنے جا رہا ہوں جو اس بستی میں رہتا ہے، فرشتے نے اس سے پوچھا کہ کیا اس کا تم پر کوئی احسان ہے جس کا بدلہ تمہارے ذمے ہو؟ اس نے جواب دیا نہیں، صرف اتنی بات
11/ ہے کہ میں اس سے اللہ تعالیٰ کی خاطر محبت کرتا ہوں، فرشتے نے کہا کہ میں تمہارے پاس اللہ تعالیٰ کا یہ پیغام لیکر آیا ہوں کہ جس طرح تم اس شخص سے اللہ تعالیٰ کی خاطر محبت کرتے ہو، اسی طرح اللہ تعالیٰ بھی تم سے محبت کرتا ہے۔

٭ ایک آدمی نے بارگاہِ رسالت میں آکر عرض کیا یارسول
12/ اللہ! قیامت کب آئے گی؟ نبی نے اس سے پوچھا کہ تم نے قیامت کیلئے کیا تیاری کر رکھی ہے؟ اس نے کہا اللہ اور اس کے رسول کی محبت، نبی نے فرمایا پھر تم اسی کے ساتھ ہو گے جس سے تم محبت کرتے ہو، حضرت انس کہتے ہیں کہ نبی کی اس بات سے ہمیں جتنی زیادہ خوشی ہوئی، اسلام قبول کرنے کے بعد
13/ اس سے زیادہ خوشی کبھی نہ ہوئی تھی کہ تم اسی کے ساتھ ہو گے جس سے تم محبت کرتے ہو۔

٭ نبی نے ارشاد فرمایا ایک مو¿من دوسرے مو¿من کیلئے عمارت کی طرح ہوتا ہے جس کا ایک حصہ دوسرے حصے کو تقویت دیتا ہے

٭نبی نے فرمایا باہمی پیار و محبت، شفقت اور مہربانی میں مو¿منین کی مثال ایک جسم
14/ کی طرح ہے، جب اس کے کسی ایک عضو کو تکلیف ہوتی ہے تو سارا جسم بیدار اور بخار کا شکار ہو جاتا ہے۔

٭نبی نے ارشاد فرمایا ایک دوسرے سے حسد نہ کرو، ایک دوسرے کو دھوکہ نہ دیا کرو، ایک دوسرے سے بغض نہ کیا کرو، ایک دوسرے سے قطع تعلقی نہ کیا کرو، اور ایک دوسرے کی بیع پر اپنی بیع نہ
15/ کیا کرو، اور خدا کے بندو! آپس میں بھائی بھائی بن کر رہا کرو، ایک مسلمان دوسرے مسلمان کا بھائی ہوتا ہے، اس پر ظلم نہیں کرتا، اسے تنہا نہیں چھوڑتا، اور اسے حقیر نہیں سمجھتا، تقویٰ یہاں ہوتا ہے، یہ کہتے ہوئے نبی نے اپنے سینے کی طرف اشارہ کیا اور یہ بات تین مرتبہ دہرائی، پھر
16/ فرمایا انسان کیلئے شر میں سے یہی بات کافی ہے کہ وہ اپنے مسلمان بھائی کو حقیر سمجھے، ہر مسلمان پر دوسرے مسلمان کی جان، مال اور عزت و آبرو کی حرمت کا خیال رکھنا ضروری ہے۔

ان آیات اور احادیث سمجھتے ہوئے تجدید عہد کے اس مہینے میں جب ہم سب اللہ کی خوشنودی کو حاصل کرنے میں تگ و
17/     دو میں لگے ہوئے ہیں ہمارا یہ جاننا ضروری ہے کہیں احساس کی کمی کی وجہ سے ہم اپنا مسلمان
بھائیوں کو کھو تو نہیں رہے ہیں؟
بشکریہ
# سلمان_حیدر
#مجاب
قلمکار#
تعمیر_کردار#
@threader_app compile
Missing some Tweet in this thread? You can try to force a refresh.

Keep Current with Syed Raza

Profile picture

Stay in touch and get notified when new unrolls are available from this author!

Read all threads

This Thread may be Removed Anytime!

Twitter may remove this content at anytime, convert it as a PDF, save and print for later use!

Try unrolling a thread yourself!

how to unroll video

1) Follow Thread Reader App on Twitter so you can easily mention us!

2) Go to a Twitter thread (series of Tweets by the same owner) and mention us with a keyword "unroll" @threadreaderapp unroll

You can practice here first or read more on our help page!

Follow Us on Twitter!

Did Thread Reader help you today?

Support us! We are indie developers!


This site is made by just two indie developers on a laptop doing marketing, support and development! Read more about the story.

Become a Premium Member ($3.00/month or $30.00/year) and get exclusive features!

Become Premium

Too expensive? Make a small donation by buying us coffee ($5) or help with server cost ($10)

Donate via Paypal Become our Patreon

Thank you for your support!