ਸਨਾ ਫਾਤਿਮਾ 🇵🇸 Profile picture
Historian | Linguist | Archaeology | Egyptology | Indology | Geology | Civilizations | Civil Supremacy | FaizAhmadFaiz | #فلسطین_الآن 🇵🇸 @SaveHumanity78
Jul 19 6 tweets 4 min read
#HistoryBuff
#Geology
ایمپوننگ (Mponeng)
دنیا کی سب سےگہری سونے کی کان (گوتنگ جوہانسبرگ، جنوبی افریقہ)
World's Deepest Gold Mine (City Gauteng Johannesburg, South Africa)
ایمپوننگ__جنوبی افریقہ میں سونے کےذخائر سے بھری ایک سرنگ
سرنگوں کےبارے میں یہ خیال کیاجاتا ھےکہ یہ خام ڈھانچے
Image
Image
لکڑی کے شہتیروں سے بنی ھوں گی اور گیس کی لالٹینوں سے روشن ھوں گے لیکن گوتنگ میں واقع ایمپوننگ سرنگ چندھیا دینے والی چمک اوڑھے ھے۔
ایمپوننگ دنیاکاسب سے گہرا زیرزمین لیول شافت ھے جس کی گہرائی ڈیٹم سے3891 میٹر اور سطح سمندر سے2062 میٹرنیچےھے۔ کان کی کہانی 1986میں شروع ھوئی۔
ایمپوننگ
Image
Image
Jul 12 8 tweets 6 min read
#HistoryBuff
#Mughal
#architecture
ادھورےخواب____
تاج محل،بادشاہی مسجد، ہرن مینار
مغل بادشاہوں کےوہ نادر،تعمیراتی سچےخواب ہیں جن کاحقیقت کاروپ لینےکی دیرتھی کہ وہ دنیاکےصف اول کےعجوبہ بن گئے۔
مگرمغل عہدکےشہنشاہوں کی چند ایسی خواہشات بھی ہیں جوخواب سےحقیقت تک کاسفرنہ کرسکیں۔
جیسے؛


Image
Image
Image
Image
- سیاہ سنگ مرمری تاج محل (Black Marble Taj Mahal)
عمارتوں کےدلدادہ بادشاہ اور دنیاکےصف اول کے عجوبہ "تاج محل" کے خالق شاہجہاں نےاپنی دوسری بیگم ممتاز محل کے اعزاز میں آگرہ میں ہی تاج محل کےمتوازی "سیاہ تاج محل" تعمیر کرنےکامنصوبہ بنایالیکن صرف تعمیراتی لاگت اوراسی کےبیٹے اورنگزیب


Image
Image
Image
Image
Jul 8 6 tweets 6 min read
#HistoryMatters
#GeologyPage
ایل پینن ڈی گواتاپے(پینول گواتاپے، کولمبیا)
El Penón de Guatape(Penol Guatepe, #Columbia)
کبھی کبھی زمین کی تشکیل اس قدرحیران کن ھوتی ھےکہ وہ پوری کائنات کی ریڑھ کی ہڈی کی شکل اختیارکرلیتی ھےجیسےماءونٹ ایورسٹ،نیاگرافال وغیرہ
ایسی ہی چٹانی سنگ تراشی کی


Image
Image
Image
Image
ایک ہنگامہ خیز مثال آسمان تک جاتی کولمبیا کی عجیب و غریب سیڑھیاں ہیں جو انسانی مداخلت اور قدرتی خوبصورتی کا ایک دلکش امتزاج ہیں۔
لاکھوں سالوں سے کھڑی چٹان پر سرکاری سفر کا باقائدہ آغاز 1954 میں ھوا۔ اس چٹان کی ایک اھم خصوصیت یہ تھی کہ اس میں اوپر تک ایک عمودی شفاف تھاجس کی وجہ سے

Image
Image
Image
Jul 5 6 tweets 6 min read
#Indolody
#ancient
#HistoryBuff
دیوپریاگ(ڈسٹرکٹ تہری گرھ وال،اترکھنڈ)
Devprayag(District Tehri Garhwal, Uttarkhand)
اترکھنڈ توکیاپورےھندوستان میں ھندوؤں کی یاتراکا، زیارت کامقدس ترین مقام جہاں 5پریاگ ملتےہیں:دیوپریاگ، وشنوپریاگ، ننداپریاگ، کرناپریاگ اور رودرپریاگ۔ انہیں پنج-پریاگ


Image
Image
Image
Image
بھی کہاجاتا ھے۔
ان میں سب سےاھم "دیوپریاگ" ھےجس کالفظی مطلب ھے "پوتر سنگم" (Sacred Confluence) کیونکہ یہ وہ جگہ ھےجہاں ھندوؤں کے دو قابل احترام اور مذہبی دریا الکنندا (Alkananda) اور بھاگیرتھی (Bhagirthi) مل کرمقدس گنگا (Ganga River)کی شکل میں بہتےہیں۔
ھندؤ صحیفوں کے مطابق یہی وہ

Image
Image
Image
Jun 28 6 tweets 6 min read
#BuddhistHeritage
#Buddhism
#HistoryBuff
یوگینگ گروٹوز/گوفا (ڈٹونگ، چین)
Yungang Grottoes/Caves (Datong, #China)
یوگینگ غار--پانچویں اورچھٹی صدی عیسوی کے بدھ مت کےزبردست اورصفائی اورمہارت سےتراشےان گنت غار اور انہی غاروں سےتراشیدہ بدھ مجسمے جوچٹانی طرزتعمیر کی سب سےکمال مثال ہیں۔


Image
Image
Image
Image
شمالی چین میں واقع شاہراہ ریشم کے ساتھ ساتھ پھیلے یہ252 غاروں میں تراشے 51,000 مجسمے 460 عیسوی میں بنانے شروع کیے گئے اور 60 سال کے طویل عرصے میں بدھ مت کے نقش و نگار کا یہ قدیم عجوبہ مکمل ھوا۔
چٹانی طرزتعمیر کےیہ مجسمے یوبانی، ھندوستانی اور ایرانی اثرات سے بنائےگئےہیں۔
یوگینگ کے


Image
Image
Image
Image
Jun 25 9 tweets 8 min read
#Indology
#Shia
#Architecture
ھوغلی امام باڑہ (ھوغلی،مغربی بنگال،بھارت)
Hooghly Imamabara(Hooghly, West Bengal, India🇮🇳)
مسلمانوں کےشیعہ فرقےکی ماہ محرم میں مذہبی رسوم کیلئےایک اجتماعی ہال"ھوغلی امام باڑہ"جسے"محسن امام بارگاہ"بھی کہاجاتاھے۔
امام باڑہ کیلئےاسلامی اصطلاح ’’حسینیہ‘‘

Image
Image
Image
ھے۔
ھوغلی امام باڑہ 1717ء میں محمد آغا مطاہر نامی ایک ممتاز فارسی نمک کے کامیاب تاجر نے قائم کیا تھا۔ دریائے ھوغلی کے کنارے پہنچ کر انہوں نے اپنی باقی زندگی یہیں گزارنے کی خواہش کی غرض سے اسی جگہ پر اپنا ٹھکانہ بنایاجہاں امام باڑہ آج کھڑاھے۔
ایک امیرھونے کے ناطےاس نے بہت سےغریبوں

Image
Image
Image
Jun 22 10 tweets 8 min read
#Lost
#Cities
#Archaeohistories
قدیم گمشدہ شہر___جو آج صفحہ ہستی سے غائب ہیں
ایک شہر (Abondened Cities)وہ ھوتےہیں جنہیں وھاں کےمکیں خود چھوڑ جائیں۔ مگرایک شہر وہ (Lost Cities) ہیں جنہیں حالات وآفات نےان کےتمام تر وجود کے باوجود مٹادیا.
اپنےوقتوں میں شناخت وطاقت کےحوالے سےآسمان کی Image بلندیاں چھونےوالے شہرآج صرف تاریخ کے اوراق اور قصے کہانیوں اور فلموں میں زندہ ہیں جیسے؛
-ایٹلانٹس (Atlantis, Greek) آج سےتقریبا 11،500 قبل کا شہر جوکبھی بلند وبالا عمارتوں، سڑکوں، تازہ پانی کےجھرنے، بہترین نہری نظام، عالیشان محلات،مسلح ا فواج، مضبوط فصیلوں، محنتی اورذہین لوگوں کا

Image
Image
Image
Jun 19 6 tweets 5 min read
#Portugal
#archaeology
#HistoryMatters
کوئنٹ ری گیلیرا (سنٹرا، پرتگال)
Quinta Regaleira/Initiation Well (Sintra)__1900 AD
الٹا ٹاور،زیرزمین کنواں یامذہبی رسماتی محل؟
پراسرارخصوصیات اوربہترین تعمیراتی طرزتعمیرکاحیران کن امتزاج لیےسنٹرا کےبہترین زیرزمین محلوں میں سےایک قدیم
Image
Image
مصری اور صوفیانہ علامات سے مزین دنیا بھر کے سیاحوں کی توجہ کا مرکز
اس زیرزمین فن تعمیرکو اطالوی ماہر تعمیرات Luigi Manini نے برازیلی-پرتگالی تاجر کی ہدایت پر ڈیزائن کیاتھا جو اس وقت Quinta da Regaleira اسٹیٹ کامالک تھا۔
 خیال کیاجاتا ھے کہ بلکہ یقینایہ کنواں خفیہ رسومات مقاصد میں Image
Jun 16 7 tweets 6 min read
#HistoryBuff
#Abandoned
#Islands
گن کنجیماجزیرہ (جاپان)
Gunkanjima Island (#Japan)
جزیرہ بھی، کوئلے کاذخیرہ بھی اور بحری جنگی میدان (Battleship Ground) بھی
ناگاساکی بندرگاہ سے تقریبا 20کلومیٹر کے فاصلے پر 3.6 ہیکٹر پر پھیلا 480 میٹر لمبا اور 150میٹرچوڑاجزیرہ گن کنجیمادراصل 1974تک
Image
Image
ایک کوئلے کی کان کے طور پر کام کرتاتھا جس پر 5000 باشندوں کے رھنے کی گنجاش تھی۔
اتنی چھوٹی سی جگہ پر اتنے افرادکی رہائش؟؟
دراصل جزیرے کو اتنےچھوٹےسے علاقےمیں اتنے زیادہ لوگوں کے رہنے کے لیے زمین کے ہر ٹکڑے کو اس طرح بنایا گیا کہ یہ جزیرہ ایک بڑے جنگی جہاز سےمشابہت اختیار کرنےلگا۔

Image
Image
Image
Jun 10 5 tweets 5 min read
#IRAN
#archaeology
اردشیر خورے (فیروزآباد، ایران)
Khurrah of Ardashir (Firuzabad, Iran)
224-240 ء
کھرہ یعنی قصر
قصراردشیرجسے "عطش کدہ" اور "Fire Temple" بھی کہاجاتاھے، ایک پہاڑکی ڈھلوان پر واقع، ساسانی سلطنت کےبانی شہنشاہ اردشیر کا محل ھےجو ایران کےجدیدشہر فیروزآباد (قدیم شہرغور)

Image
Image
Image
میں دریائے تنگب کے مغربی کنارے (Western Bank of Tangab River) پر ایک دلکش تالاب کے ساتھ بنایا گیا تھا۔
اردشیرخورے سےاسکا نام تبدیل کرکے "پیروز" رکھ دیا گیا تھا۔ وہی پیروز جسےعربوں نے فتح کے بعد فیروز کہنا شروع کیا۔
گویا اس شہر نےبھی محل کی طرح اپنےکئی نام بدلے۔ زمانہ قدیم کےغورسے


Image
Image
Image
Image
Jun 4 5 tweets 5 min read
#Indology
#Fort
#architecture
جےگڑھ قلعہ (جےپور، راجھستان)
Jaigarh Fort (Jaipur, Rajhastan)
ھندوستان میں قلعوں کامرکزجانےوالاخطہ "راجھستان" لیکن تاریخ کامیدان جنگ بھی۔
جب ایک خطہ جنگ وجدل اورخون ریزی کی طویل تاریخ رکھتاھو وھاں شاندارقلعوں،  محلوں اورحویلیوں کا بچ جاناایک کمال ھے۔


Image
Image
Image
Image
ایسا ہی ایک کمال جےپور قلعہ ھےجو ماضی اور حال دونوں کی اذیتوں کی گواہی دیتا ھے۔ اگر اس کے عروج کے زمانےمیں اس کا بھرپور استحصال کیا گیا لیکن آج ایک بار جب اس قلعے میں آ جاتے ہیں تو یہ  21ویں صدی میں بھی مکمل محسوس ھوتاھے۔
پندرھویں صدی میں تعمیر کیےگئے اس قلعے کو "Victory Fort" کے


Image
Image
Image
Image
Jun 2 6 tweets 4 min read
#HistoryMatters
#ZionistTerorism
#palestinenakba76
ناکبہ کیا ھے؟
What is Nakba?
کوئی لبرل، گدھ،اسلام دشمن،تنظیم انسانی حقوق، یااسرائیل کاحامی آپ کوکبھی یہ نہیں بتائےگاکہ "ناکبہ" کیاھے؟ نہ ہی "ناکبہ" کی کھل کرحمایت کرےگا۔
عربی الماخذاس لفظ کےاردومعانی ہیں"تباہی" یعنی"Catastrophy"۔
Image
Image
ناکبہ دراصل 1948 میں "اسرائیلی ریاست" کا راستہ ہموار کرنے کیلئے صیہونی فوجی دہشت گردوں کے ہاتھوں فلسطینیوں کی ان کی سرزمین سے مٹائے جانے کی مہم کے نتیجے میں وجود میں آیا۔
دراصل اسرائیلی ریاست کےقیام کا منصوبہ بہت پہلے 1945میں برطانیہ کی یہودیوں کی پشت پناہی کے نتیجے میں وجودمیں آ
Image
Image
May 27 6 tweets 6 min read
#Indology
#architecture
#Maharashter
بی بی کا مقبرہ (اورنگ آباد، ریاست مہاراشٹر)
Bibi Ka Maqbara (Aurangabad, Maharashter)
سنگ مرمر سے تراشہ ھوا شفاف بدن
دیکھنے والے اسے تاج محل کہتے ہیں
تاج محل کی ہوبہو نقل__وہی سنگ مرمری حسن و دلکشی اورجاذبیت
اورنگ آبادمیں (1651-1661) دس سال کے


Image
Image
Image
Image
طویل عرصے میں مغل بادشاہ اورنگزیب عالمگیر کےبیٹے شہزادہ اعظم شاہ کی اپنی والدہ دلراس بانو بیگم سے وابستگی کی نشانی کے طور پر تعمیر کردہ "بی بی کا مقبرہ" سے زیادہ حسین یادگار اور کیا ھو سکتی ھے!
یہ مقبرہ آخری یادگاری مقبرہ ھے جو صرف ایک شاہکار ہی نہیں تحقیق کا موضوع بھی ھے۔ اس کا


Image
Image
Image
Image
May 13 7 tweets 5 min read
#Pakistan
#Punjab
#Tourism
مری (پنجاب، پاکستان)
ملکہ کوہسار (Queen of Hills)
مری اسلام آباد-کوہالہ ہائی وےN75 کےساتھ، اسلام آبادسےتقریباً30کلومیٹرشمال مشرق میں واقع اصل میں افغان سرحدپر تعینات برطانوی فوجیوں کیلئےایک سینیٹوریم کےطور پرقائم کیاگیاتھا۔
مری کانام 'مڑھی'، "اونچی جگہ"

Image
Image
Image
سےماخوذ ھے. مری کےبارےمیں ایک مشہور روایت یہ بھی ھےکہ اسکانام کنواری مریم کےنام پر رکھاگیا۔
مری ہل سٹیشن میجرجیمزایبٹ(Major Jnes Abbot) نے1847میں دریافت کیا۔اسکی خوبصورتی اوراھمیت جان کر اسکادیوانہ ھونےکےبعد 1850میں پنجاب کےایڈمنسٹریٹر سرہنری لارنس(Sir Henery Montgomery Lawrence)

Image
Image
Image
May 4 7 tweets 2 min read
#FactsMatter
#Punjab
#Traitors
(گذشتہ سے پیوستہ)
مخدوم شاہ محمودقریشی (و:1869)
19ویں صدی کےمخدوم شاہ محمود قریشی، جوسابقہ وزیر داخلہ شاہ محمود قریشی (22 جون 1956) کے ہی ھم نام ہیں، ریاست پنجاب کاغدار خاندان ھے اور مٹی سے دشمنی
کےعوض "انعامات" کی ایک طویل فہرست لیے ھوئے ہیں۔
ملتان کے سرداران جو انگریز حکومت کےسب سے زیادہ وفادار تھےاور ہر ممکنہ حد تک اپنی وفاداری کا اظہار کرنے کیلئے بےچین تھے ان میں سب سےاھم یہی مخدوم شاہ محمودقریشی (و:1869)ء تھے۔
یہ ملتان کےمشہور صوفیاء کرام حضرت بہاؤالدین ذکریا (و:1262) اور شاہ رکن عالم کے مزارات
Apr 29 7 tweets 7 min read
#LucknowDiaries
#architecture
بڑا امام بارگاہ(لکھنؤ، بھارت)
Bara Imam Bargah (Lucknow, Uttarpardesh)
اہل تشیع کاوہ واحدھندوستانی مرکزجوبارگاہ کم اوردلکش بھول بھلیاں،تنگ راہداریوں اورسیڑھیوں کاایک پیچیدہ نیٹ ورک زیادہ ھے۔لکھنؤکی ایک مشہورکہاوت ھے؛
جس کو نا دےمولا
اسکو دےآصف الدولہ


Image
Image
Image
Image
کے پیچھے وجہ اس یادگار کی تعمیر تھی جسے 1784 میں ایک امدادی منصوبے کے طور پر اس خطہ میں مہلک قحط کی زد میں آنے کے بعد ھوئی تھی۔
اس منصوبےسےکئی ہزار افراد کو روزگار فراہم ھوا۔ 18رویں صدی میں اودھ کےچوتھے نواب آصف الدولہ کا بھارتی ریاست اترپردیش میں تعمیرکردہ ایک تعمیراتی معجزہ اور


Image
Image
Image
Image
Apr 22 6 tweets 6 min read
#Indology
#Gujrat
#architecture
لکشمی ولا محل (ودودر، ریاست گجرات)
Lakshmi Vila Palace (Vadodara, Gujrat State)
ھندوستان کی سب سے بڑی شاندار، عام، اور نجی رہائش گاہ (Public Residence) جو بکنگھم پیلس (برطانیہ) سے چار گنا بڑی ھے۔
گائیکواڑ سلطنت کا "لکشمی محل" جسے ریاست بڑودہ کے


Image
Image
Image
Image
مہاراجہ سیاجی راؤ گائیکواڑ III (Sayaji Rao Gaekwad III) نے 1890 میں بنایا۔
یہ شاندارلکشمی ولا جس کےمرکزی معمار کااعزاز میجرچارلس مینٹ کو حاصل تھا، آج بھی یہ ودودر کے شاہی خاندان کےزیر استعمال رہائش گاہ ھے۔
500 ایکڑپر پھیلا لکشمی ولا 60 لاکھ روپےکی لاگت سے19ویں صدی کے انڈو-سراسینک


Image
Image
Image
Image
Apr 18 6 tweets 4 min read
#FactCheck
#HistoryMatters
#India
اندرا گاندھی___تاریخ سےچند اوراق
اندرا نہرو__بھارت کےپہلےوزیراعظم نہرو کی اکلوتی اولاد
اندرا گاندھی__بھارت کی تیسری اور دو بار منتخب ھونےوالی واحدخاتون وزیراعظم
اندرا نہرو__جب 5سال کی تھیں تو انہوں نے"سوادیشی تحریک" کےحق میں اپنی تمام انگلش گڑیاں Image جلا دی تھیں۔
اندرا گاندھی__اکثر اوقات پیار سے "گنجی گڑیا" (Gunji Gurya) کے نام سے پکارا جاتی تھیں۔
اندرا گاندھی__نے Somerville کالج، آکسفورڈ سےتعلیم حاصل کی۔
اندرا گاندھی__نے تعلیم مکمل کرکے وطن واپسی پربھارتی تحریک آزادی میں بھرپورحصہ لینا شروع کیا۔
اندرا گاندھی__سیاسی میدان میں

Image
Image
Image
Apr 16 7 tweets 4 min read
#Monolithic
#Geology
#Rocks
#Mystery
کھوہڑی نماچٹان (نیواڈا، آسٹریلیا)
Skull Rock (Nevada, Australia🇦🇺)
آبنائےباس (Bass Strait) کے کنارے چھپا، وکٹوریہ ولسنز پرومونٹری ساحل (Victoria's Wilsons Promontory Coast) پرچپ چاپ، نیلگوں پانیوں سے گھرا،بڑا، پراسرار اوراچھوتا جزیرہ جو انسانی

Image
Image
Image
کھوپڑی کی مانند دکھائی دیتاھے۔
یہ ناقابل رسائی جزیرہ ملبورن کےجنوب میں، درحقیقت گرینائٹ کاایک بےہنگم ٹیلہ ھےجسے9سیاحوں نےتلاش کیا اور اسکی قابل ریکارڈپیمائش کرکے اسےزندہ کردیا۔
گرینایٹ پتھرھونےکےباعث ماہرآثارقدیمہ اس غارکوپتھروں کےعہد(Monolithic Era/stone age 2.6 million yrs ago) Image
Apr 11 6 tweets 3 min read
#ancient
#Historical
#Sources
فن تاریخ سےقبل تاریخ کےمآخذات
Sources of History before the Art of History
فن تاریخ سےپہلےتاریخ کیسےمرتب کی جاتی تھی؟
ایک دلچسپ سوال جو اپنےآپ میں ایک مکمل تاریخ ھےجس کاجواب ھےکہ "تحریری تاریخ" سےقبل "زبانی تاریخ" تھی۔
دراصل تحریری تاریخ (Documented/ Periodicals)
سے قبل انسان حروف تہجی کو نہیں جانتاتھا۔ اس لیے زبانی تاریخ کاتصور تھا۔ یہ تصور اتنا ہی پراناھے جتنی تاریخ خود۔
خاندان کے بزرگ نوجوان نسل کواپنے آباءو اجداد کےکارنامے بیان کرتےتھے۔ اس طرح تاریخی واقعات، یادیں ایک نسل سے دوسری میں منتقل ھوتی تھی۔
پانچویں صدی قبل مسیح
Apr 8 5 tweets 2 min read
#HistoryBuff
#FactCheck
خلیل جبران
(1883_1931)
ایک تصوراتی شخصیت یا کتابی نام!
کون ہیں خلیل جبران؟
48سالہ خلیل جبران حقیقی طور پر لبنان کے شہر بشاری کی پیدائش درحقیقت ایک نامور ناول نگار، فلسفی، مضمون نویسی، شاعر اورفنکار تھے۔
خلیل جبران سعد جبران اور کرسچیئن کمیلا جبران کے چھوٹے Image بیٹے تھے۔ 1885 میں جبران اپنی والدہ اور بہن بھائیوں کے ساتھ امریکہ ہجرت کر گئے۔
یہیں پر جبران نےانگریزی سیکھی اور آرٹ کی کلاسوں میں داخلہ لیا۔ جبران کی والدہ کپڑے بیچ کر خاندان کی کفالت کرتی رہیں۔
1902 میں جبران کی بہن سلطانہ، سوتیلے بھائی اور والدہ کا بالترتیب تپ دق اور کینسر سے Image